غدار کون؟

کچھ جنرلز نے ڈاکٹر معید پیرزادہ کو بتایا کہ عمران خان نے ان کے ساتھ وہ کیا جو انڈیا بھی نہ کرسکا۔ اب ساری قوم ان کے ادارے سے نفرت کرتی ہے۔ اور اس سب کا ذمہدار عمران خان ہے۔

مجھے نہیں پتہ یہ جرنیلوں کی سادگی ہے یا بددیانتی۔ کیونکہ حقائق اس کے بلکل برعکس ہیں۔

یہ نفرت عوام کے دلوں میں کمپنی کی پچھتر سال کی اِیْذا رَسانیوں کی وجہ سے پیدا ہوئی ہے۔ کوئی ایک دو سال کی بات نہيں ہے۔ لیکن پچھلے سال سے کام کچھ تیز ضرور ہوگیا ہے۔

اس کا اظہار تو کمپنی کے موجودہ ہرکارے حامد میر نے بھی ایک تازہ سیمنار میں کیا ہے۔ اور کہا کہ وہ یہ بات جیو پر نہيں کرسکتا۔ وہاں ایسی باتوں پر پابندی ہے۔

عمران کو تو اس نفرت کا پوری طرح ادراک بھی نہيں تھا۔ عمران تو جب پچھلے سال نو اپریل کو ایک ڈائری اٹھا کر جارہا تھا تو اسے اندازہ ہی نہيں تھا کہ پہلے سے زخم خوردہ عوام اپنے مینڈیٹ کا پھر سے توہین برداشت نہيں کریں گے۔

کمپنی سے نفرت کے ذمہداران وہ سارے جرنیل ہیں جنہوں نے جمہوری حکومت کا تختہ الٹا اور ملک کو تاریکیوں میں ڈبو دیا۔ وہ دو جرنیل ہیں جو نو اپریل 2022 کو چھڑیاں لیکر کمانڈوز کے ساتھ وزیراعظم ہاؤس گئے تھے اور گالیاں بکی تھیں۔

وہ حرامخوار قمر گمنامی ہے جس نے پارلیمنٹ کے اردگرد قیدیوں کی وینز بیھجی تھیں، جس نے آدھی رات عظمی کو حکم دیا کہ دکان کھولے۔

وہ قاتل ہیں جنہوں نے ارشدشریف کو شہید کروایا، جنہوں نے عمران خان پر قاتلانہ حملہ کروایا۔ جنہوں نے سابقہ وزیراعظم کو توہین آمیز طریقے سے عدالت کے باہر سے اغواء کروایا۔ جنہوں نے نو مئی کو false flag operation کی پلانگ کی۔ جنہوں نے اس کی آڑ میں ملک کی سب سے مقبول پارٹی کے خلاف ظلم و بربریت کی بدترین کیمپئین لانچ کی۔

جنہوں نے عمران ریاض خان کو اغواء کر کے غائب کردیا۔ جنہوں نے شہریوں کی چادر و چاردیواری کی حرمت پامال کی۔ جنہوں نے لوگوں کو کیڑے مکوڑے کی طرح ٹریٹ کیا۔ جنہوں نے تحریک انصاف کے لیڈروں پر ظلم کے پہاڑ توڑ دیے کہ وہ پارٹی چھوڑ کر کمپنی کے ساتھ مل جائیں۔

یہ سب حرامخوار ادارے سے نفرت پیدا کرنے کے ذمہدار ہیں۔ عمران خان نہيں۔ عمران خان تو عوام اور ادارے کے درمیان بفر زون بن کر کھڑا ہے۔ خدا نہ کرے تم یہ بفر زون ایک دن ہٹا دو۔

از جمی ورک


Posted

in

by

Comments

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *